44

ہرے اور سرخ سیبوں کے ذائقے۔

ملتان(اجالا نیوز-01نومبر-2020)
سیب کی اہمیت سمجھنے کی ضرورت ہے کیونکہ صرف کہاوت کو دہرا دینا کہ روزانہ سیب کھانے سے آپ ڈاکٹر سے دور رہیں گے،کافی نہیں، خاص طور پر سیب کو لوگ اہم اور خوش ذائقہ نہیں سمجھتے۔یہ بازاروں میں محدود پیمانے پر آتا ہے جبکہ غذائیت میں سرخ سیب سے کہیں بڑھ کر ہوتا ہے۔
ہرے اور سرخ سیبوں کے ذائقے میں تھوڑا سا فرق ترشی اور مٹھاس کا بھی ہوتا ہے۔
اچھی صحت کے لئے آپ کو دونوں رنگوں کے سیب کھانے چاہئیں۔ہر سیب میں فائبر،معدنیات اور وٹامنز قدرے زائد تعداد میں پائے جاتے ہیں۔ناشپاتی کی طرح سیب کو بھی دھو کر چھلکے سمیت ہی کھانا درست عمل ہے۔چھلکے کھانا اس لئے ضروری ہے کہ ان میں Pectin اور فیلو نائیڈز بکثرت پائے جاتے ہیں۔یہ دونوں اجزاء نظام ہاضمہ کو درست کرتے ہیں۔
ہرے سیب میں ریشے یعنی کی مقدار زیادہ ہوتی ہے۔
ہرا سیب کھانے سے جلد بھی شاداب اور تروتازہ رہتی ہے۔اس میں وٹامن Aکی خاصی مقدار ہوتی ہے جو ہماری بینائی کے نقائص نہیں ہونے دیتی۔
علاوہ ازیں جلد کے کینسر کے خلاف قوت مدافعت پیدا کرتی ہے۔جسم میں خون کی روانی بہتر بنانے کے لئے بھی ہرا سیب مفید پھل ہے چونکہ اس میں چکنائی نہیں ہوتی اس لئے خون کی روانی بہتر رہتی ہے۔ہرے سیب سے مربہ اور شربت بھی بنایا جاتا ہے۔
جیم اور جیلی جیسی مصنوعات میں بھی استعمال ہوتا ہے۔اس میں موجود کیلشیئم،ہڈیوں اور دانتوں کو مضبوط کرتاہے۔صالح خون یعنی صاف خون پیدا کرتا ہے بشر طیکہ صبح اور تیسرے پہر کھا لیا جائے۔جگر کو طاقت دیتا ہے اور خفقان(ایک بیماری جس میں دل کی دھڑکن تیز ہو جاتی ہے)کو دور کرتا ہے ۔سیب کا رس پینے سے پیٹ اور انتڑیوں کے کیڑے مر جاتے ہیں۔سر درد میں بھی سیب پر ہلکا سا نمک لگا کر کھانے سے آرام ملتا ہے تاہم ہائی بلڈ پریشر میں مبتلا افراد نمک کے بغیرکھائیں تو بہتر ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں